About Anjuman

بہت دنوں سے یہ بات آرہی تھی کہ جامعہ کے مستفیدین، فارغین و حفاظ کی ایک انجمن طلبہ قدیم کا قیام ہو جس کے تحت طلبہ فارغین کو جامعہ سے جوڑا جائے اور ان سے ربط و ارتباط رکھا جائے، تاکہ وہ جامعہ کی تعمیرو ترقی میں مفید تجاویز، مشورے و مالی تعاون حتی المقدور کرتے رہیں۔

اسی سلسلے میں 11 نومبر 1998 کو جامعہ میں ایک پروگرام رکھا گیا جس میں مولانا ابوالبقاء ندوی صاحب، مولانا محمد عمران فلاحی صاحب اور مولانا مطیع اللہ فلاحی صاحبان تشریف لائے۔

ان کی موجودگی میں فارغین جامعہ کی ایک نشست ہوئی جس میں انجمن کے متعلق افہام وتفہیم اور دستور سازی کی گئی۔

نشست میں یہ بات طے پائی کہ وہ طلبہ جنھوں نے حفظ، ثانوی یا عربی سوم کے درجات پاس کئے ہیں وہ اس کے ممبر ہوسکتے ہیں۔ دستور میں یہ بات طے ہوئی کہ ہر تین سال پر انجمن کا اجلاس منعقد ہوگا اور دوبارہ نئے انتخابات ہوں گے۔

بالآخر 27 اور 28 مئی 2006 کو ایک عظیم پروگرام رکھا گیا، اس پروگرام میں انجمن طلبہ قدیم کے ذمہ داروں کا انتخاب محترم مولانا محمد یوسف اصلاحی صاحب کے زیر صدارت عمل میں آیا۔

انتخاب کے بعد ذمہ داران انجمن نے جامعہ کی تعمیر و ترقی میں تعاون کا یقین دلایا اور گاہے بگاہے تجاویز و مشورے اور تعاون کے لئے احباب کو متوجہ کرتے رہنے کا وعدہ کیا۔

آخری انتخابات 25 اور 26 فروری 2017 کو عمل میں آئے جس میں صدر انجمن ڈاکٹر محمد عارف علیگ کو، سیکریٹری برہان احمد صدیقی کو اور خازن عبدالرحمن مصباحی کو بنایا گیا ۔

انتخابات کے بعد ذمہ داران کے ذریعے مختلف سرگرمیاں انجام دی جارہی ہیں، خصوصا انجمن کی دہلی یونٹ مخلتف مواقع پر میٹنگس کرتی رہتی ہے اور رمضان میں جامعہ سے آئے ہوئے استاد کے اعزاز میں افطار پارٹی کرکے فارغین سے جامعہ کے لئے زیادہ سے زیادہ تعاون دلوانے کی کوشش کرتی ہے۔